عشقِ مجاز کے لمحے

Posted in دھوپ کا خیمہ

عشقِ مجاز کے لمحے


اب اس سو لہ سالے۔۔
دلکش بھو لے بھالے۔۔
نیلے نینو ں والے
لڑکے سے درخو است کرو
’’شرنا‘کی آواز پہ نا چے۔۔ جیسے کتھک ناچ کیا تھا کل اس نے
نازک قوس کلا ئی کی۔۔قوسِ قز ح کے رنگ بکھیرے
نرم تھرا ہٹ پاؤ ں کی۔۔جیسے پارہ ٹو ٹتا جا ئے
تھرکاتا جائے اپنے بم
گھومے اپنی ایڑھی پر
اور تناسب نرم بدن کا تھال کے تیز کنا روں پر دکھلا ئے
اورومی کے نغمے گا نے والی۔۔۔ سرخ سفید رقا صہ
ٌٌآج تمہاری محفل میں
میرے ہمراہ آئے ہوئے ہیں
حافظ،خسرو،بلھے شاہ اورمادھو لال حسین