مری جان! منتظر رہنا

Posted in دھوپ کا خیمہ

مری جان!  منتظر رہنا


آب  جو  کے  ساتھ چلتی  ایک  پٹڑی  او ر  میں
اپنے   مو ٹر   سا ئیکل  کی   تیز   تر   رفتار   پر
سوچتا   ہوں  وقت  سے  آگے  نکل  آیا   مگر
 یہ  کلائی   پر  بند ھی  ر اڈو  کی  رو  پہلی  گھڑی
اپنی  سو ئی  کی  سبک  اندام  حرکت  سے   مجھے
پھر  جکڑ  دیتی  ہے  لمحوں  کی  کسی  زنجیر  میں
منتظر  رہنا  مری  جان ۔۔ساعتوں  کی  قید  سے
بس نکل آوٴں گا تھو ڑی دیر  میں۔۔کچھ  دیر  میں