ان زپ فائل

Posted in دھوپ کا خیمہ

ان زپ فائل


کتابوں میں رکھے ہوئے تتلیوں کے پروں کی شفق اب کہاں جائے گی
درختوں پہ لکھے ہوئے نام سے
یار کو بھیجنے والے رومال پر
سرخ ریشم کے ہوتے ہوئے کام سے
رنگ و خوشبو کے مہکے ہوئے بام سے
ہجر کی صبح سے ، وصل کی شام سے
گفتگو کرنے والا
مرے جیسا ٹوٹے ہوئے خواب شب بھر رفو کرنے والا کہاں جائے گا