ننگ کا بھی لباس اگ آئے

Posted in نیند کی نوٹ بک

ننگ کا بھی لباس اگ آئے

کچھ بدن پر کپاس اگ آئے

 

ہم نفس کیا ہوا سوئمنگ پول

پانیوں میں حواس اگ آئے

 

۱۔آتے جاتے رہو کہ رستے میں

یوں نہ ہو پھر سے گھاس اگ آئے

 

سوچ کر کیا شجر قطاروں میں

پارک کے آس پاس اگ آئے

 

گائوں بوئے نہیں اگر آنسو

شہر میں بھوک پیاس اگ آئے

 

کوئی ایسی بہار ہو منصور

استخوانوں پہ ماس اگ آئے