اشتہار برائے ضرورت

Posted in میں عشق میں ہوں

 

مجھے اک خوبصورت دوست کی فوری ضرورت ہے

مرے گھر میں کسی خوش بخت کی فوری ضرورت ہے

صباحت خیز رنگت ہو، صبا سی چال رکھتی ہو

بڑا شاداب چہرہ ہو، سنہرے بال رکھتی ہو

وہ کالی جھیل سی آنکھیں، شفق سے گال رکھتی ہو

ادھوری شام رہتی ہو، لب و رخسار میں اس کے

کوئی اقرار شامل ہو کہیں انکار میں اس کے

وہ چائے بھی بناتی ہو قرینے سے سلیقے سے

اسے شرمانا آتا ہو مگر اچھے طریقے سے

قلو پطرہ سے لب ہوں مسکراہٹ مونا لیزا سی

دوپٹے بھولتی پھرتی ہوئی الھڑدوشیزہ سی

کوئی مستانی لڑکی ہو، کوئی دیوانی لڑکی ہو

کئی کہسار و دریا ہوں کنارِ خواب تک اس کے

مسلسل چلتے رہنا ہو کنارِ خواب تک اس کے

بدن سے بات کرتی ہو،نظر سے کیت کہتی ہو

میانوالی کے جیسی ہو، میانوالی میں رہتی ہو

ملائم نرم و نازک ساتھ کی فوری ضرورت ہے

کسی تازہ حنائی ہاتھ کی فوری ضرورت ہے

کسی اخبار میں دیتا ہوں جا کر اشتہار اپنا

مجھے اک خوبصورت دوست کی فوری ضرورت ہے

مرے گھر میں کسی خوش بخت کی فوری ضرورت ہے