زاویہ

Posted in تین کواڑ

زاویہ

جودو سیدھے خط
آپس میں ملتے ہیں
اور ایک زاویہ پیدا ہوتا ہے۔
کتنی صدیوں پہلے میرے دوست اسے
اشکالِ ریاضی سے باہر کھینچ لے آ ئے تھے
اور لہرایا تھافلسفے کی وادی میں
سوچ اور فکر کا زاویہ
یاد آتا ہے۔۔شاید دو سو ہجری میں
مجھ سے مرے اک محبوب نے اتنا کہا تھا
’’دنیا ایک کمرہ ہے
جس کے فرش پہ بیٹھے لوگ ہیں اپنے کا موں میں مصروف
اوراک کونے میں ہم لوگ کھڑے ہیں
ان کا تماشا کرتے ہیں
دیکھنا دنیا کو
اک کو نے میں میرا کھڑے ہو کر
دین اسی کی ہے۔
یہ میرا کونا میرا زاویہ ہے
میں دنیا کو دیکھتاہوں اس کونے سے
لیکن دنیا دور تلک موجو د نہیں