کان میلیا

Posted in تین کواڑ

کان میلیا

داتا کے دربار کے باہر
میری کان میں اتری ۔۔۔اک مانوس آواز
’’کان کرائیے صاف جناب
کان بڑے ہی اچھے طریقے سے
میں کرتا ہوں صاف‘‘
اس آواز کی جانب ۔۔ غور سے میں نے دیکھا
چہرہ بھی پہچانا پہچانا سا تھا
یہ اچھا بھلامشہورادیب تھا ایک
میں نے پوچھا حیرت سے
تم صاف کیوں کرتے پھرتے ہو۔لوگوں کے کان
اچھے بھلے لکھنے والے آدمی ہو۔
تم کو کہیں بھی نوکری مل سکتی ہے۔
کہنے لگا
میں پیسوں کے چکر میں نہیں
اس قوم کے کانوں میں
دراصل بڑی میل جمی ہے۔
کوئی بات سنائی دیتی نہیں ہے لوگوں کو
اب دیکھو ساٹھ برس پہلے
وہ جو مکان الاٹ ہوا تھا مجھ کو
اس کا قبضہ آج تلک
ملا نہیں ہے مجھ کو
کون عدالت ایسی ہے۔ جس کے دروازے پر۔۔میرے ہاتھ نے دستک رکھی نہیں
کوئی مگر سنتا ہی نہیں
سو یہ سوچاہے
کچھ کہنے سے پہلے
لوگوں کے کانوں سے میل نکالی جائے