آؤہم بھی ظالم بن جائیں

Posted in تین کواڑ


آؤہم بھی ظالم بن جائیں

یہ کچہریوں سے نکلتے ہوئے سچائیوں کے مشعل بردار جلوس۔۔۔۔
یہ جمہوریت کی سڑکوں پر۔۔
دیر تک جلتے ہوئے کالے کا جل ٹائر۔۔
اپنے حقوق کی تلاش میں نکلی ہوئی یہ غربت زدہ زندگی۔۔
سوال کرتے ہوئے تباہ حال انسانی ڈھانچے۔۔
بچوں سمیت خود کشیاں کرتی ہوئی مفلوک حال مائیں۔۔۔۔
کون سمجھائے انہیں کہ یہ سرمایہ دارانہ نظام۔۔۔
اک نہ ختم ہونے والی رات ہے۔
جتنے نظریے بھی اس نظامِ زر کے خلاف آئے ہیں۔
تاریخ میں ان کی عمرچند لمحوں کے برابر ہے
یہی نظام ظلم ہمیشہ سے ہے۔
اور شاید آنے والے انساں کا بھی یہی مقدرہے